جنید بغداد

550

اسلامی تصّوف کی تاریخ میں بغداد کا مدرسۂ تصوّف ، جو تیسری صدی ہجری کی زوال پذیرعباسی حکومت کے پایۂ تخت میں اپنے شباب پر تھا، ایک نہایت اہم دور کی نمائندگی کرتا ہے۔ اور اس مدرسے کی شہ نشین پر جو شخصیت ایک قدسی جلال ووقار کے ساتھ متمکن نظر آتی ہے وہ حضرت جنید ؒ علیہ الرحمتہ کی ہے، جو اس کتاب کاموضوع ہے۔
یہ کتاب حضرت جنید ؒ کامحض سوانحی تذکرہ نہیں ہے، نہ یہ ان کے روحانی کمالات اور خوارقِ عادات کی اس طرح کی حکایت سرائی ہے جو صوفیہ اور بزرگان کے تذکروں میں عموماً دیکھنے میں آتی ہے۔ یہ کتاب حضرت جنید ؒ کی شخصیت پر ایک متین ، عالمانہ اور بصیرت افروز بحث ہے

Category:
Open chat